Home تاریخ اسلام سيدنا خالد بن وليد رضى الله عنه
2.19 MB
Dewey
297/9/1478
سيدنا خالد بن وليد رضى الله... Book Name:
ضياء الرحمن فاروقى Author:
تالیف Translator:
۵۴۸ Downloaded: ۷۳۵۴ Displayed:
Sunday، 24 June 2012 Date Added:
Wednesday، 05 September 2012 Last updated:
۲۵ Pages books: Not available Book size:
Urdu Book Language:
Source:
Send to Social Networks
برچسب‌های این کتاب

 سيدنا خالد بن ولید رضی اللہ عنہ جلیل القدر صحابی اور اسلامى تاريخ كے اولو العزم شمشير آزما اور عبقرى صفت جرنیل تھے ۔ دنيائے كفر سے 125 لڑائياں لڑنے اور ايك بھى لڑائى ميں شكست نه كھانے والا عظيم المرتبت مجاهد ، جنگجو ، بهادر اور نامور سپه سالار كے مختصر تعارف پر مشتمل كتابچه ۔ آپ کی شجاعت وبہادری اور زیرکی وبصیرت دیکھ کر ناطق وحی صلی اللہ علیہ وسلم نے آپ رضی ا للہ عنہ کو ’سیف من سیوف اللہ ‘یعنی خدا کی تلوار کا پرشکوہ لقب عطا فرمایا۔زیر نظر کتابچہ میں آپ رضی اللہ عنہ کے بارے میں جامع معلومات فراہم کی گئی ہیں اور پیدائش سے لے کر جوانی،قبول اسلام اور کارہائے نمایاں کا مختصر تذکرہ ہے۔اس کے مطالعہ سے یقیناً سيدنا خالد بن ولید رضی اللہ عنہ کی محبت دل میں اور بڑھے گی اور آپ کی سیرت کو اپنانے کا جذبہ پیدا ہوگا۔حقیقت یہ ہے کہ آج امت کو خالد بن ولید کے کردار کی جس قدر ضرورت ہے ،تاریخ کے کسی دور میں نہیں رہی۔کیا عجب کہ کسی کے دل میں یہ جذبہ بیدار ہو جائے ۔

  • Index of this book is currently not available.
There is not considerably about this book
  • This book is not currently available in other languages.
Your Comment about this book

Your Name :

Please write your name or nickname. Enter a word for your name. You can use up to 60 letters in its name.

Email Address :

Email arrives with the format is not correct.Please enter your email

Rate Book :

Type Your Comment :
 
Please enter your comment Enter a word for your comment. You can use up to 1000 letters in its comment.
Enter anti-spam code image in the box below:
security
Please enter the security code displayed in the box.Only numbers and letters do not include security code.
If Illegible Code, click on the Picture or HERE to get new Captcha.





No comments for this book or the administrator has not yet confirmed.